Bichraon mein Mushaira

Articles

حضرت قاضی برہان الدین فائونڈیشن (رجسٹرڈ) کے زیر اہتمام بچھرائوں میں مشاعرے کا انعقاد

پریس ریلیز

بچھرائوں،حضرت قاضی برہان الدین فائونڈیشن (رجسٹرڈ) کے زیر اہتمام برہان العارفین لنگرِ فقراء حضرت قاضی برہان الدینؒ اور حضرت شاہ محمد اعظمؒ کے عرس مبارک کے موقع پر ہر سال کی طرح امسال بھی ایک باوقار محفل شعر وسخن کا انعقاد کیا گیا اس محفل میں بڑی تعداد میں شاعری کے شوقین سنجیدہ سامعین نے شرکت کی اس محفل شعر و سخن میں مقامی شعرا کے علاوہ دہلی اور دیگر مقامات سے آئے شعرائے کرام نے شرکت کی۔ یہ محفل شب ایک بجے اختتام پذیر ہوئی۔ مشاعرے کی صدارت قاری فضل الرحمن انجم نے کی جب کہ نظامت کے فرائض عالمی شہرت یافتہ ناظم معین شاداب نے انجام دیے۔آخر میں مشاعرے کے کنوینر اور فائونڈیشن کے چیئرمین رئوف رامش نے حاضرین اور شعرائے کرام کا شکریہ ادا کیا۔قارئین کی خدمت میں منتخب اشعار پیش ہیں۔بچھرائوں،حضرت قاضی برہان الدین فائونڈیشن (رجسٹرڈ) کے زیر اہتمام برہان العارفین لنگرِ فقراء حضرت قاضی برہان الدینؒ اور حضرت شاہ محمد اعظمؒ کے عرس مبارک کے موقع پر ہر سال کی طرح امسال بھی ایک باوقار محفل شعر وسخن کا انعقاد کیا گیا اس محفل میں بڑی تعداد میں شاعری کے شوقین سنجیدہ سامعین نے شرکت کی اس محفل شعر و سخن میں مقامی شعرا کے علاوہ دہلی اور دیگر مقامات سے آئے شعرائے کرام نے شرکت کی۔ یہ محفل شب ایک بجے اختتام پذیر ہوئی۔ مشاعرے کی صدارت قاری فضل الرحمن انجم نے کی جب کہ نظامت کے فرائض عالمی شہرت یافتہ ناظم معین شاداب نے انجام دیے۔آخر میں مشاعرے کے کنوینر اور فائونڈیشن کے چیئرمین رئوف رامش نے حاضرین اور شعرائے کرام کا شکریہ ادا کیا۔قارئین کی خدمت میں منتخب اشعار پیش ہیں۔بربادی کے الزام کو اغیار پہ رکھ کر
نادانیاں ہر موڑ پہ ہم کرتے رہیں گے
قاری فضل الرحمن انجم
ابھی نہ روک یہ بارانِ سنگ جاری رکھ
شکستہ جاں ہی سہی میں ابھی سلامت ہوں
اسلم سحروارثی
کوئی تذلیل کرتا ہے تو اُس سے دکھ تو ہوتا ہے
مگر اک فائدہ بھی ہے تکبر ٹوٹ جاتا ہے معین شاداب
خامشی کھنڈر پکارے ہے
منھ نہ پھیروں محل رہا ہوں میں
فرمان چودھری
سناٹوں کو نوچ کے آہیں کہتیں ہیں
کم ظرفوں کو تاج حکومت مت دینا
ارشد ندیم
پہلے تو سر قلم کر دیے گئے
بدنام اُس کے بعد میں ہم کر دیے گئے
نسیم دھامپوری
ہزاروں بار ولولے دل کے نکالے ہیں
یہ جتنے حسن والے ہیں ہمارے دیکھے بھالے ہیں
ظہیر احمد اثر
اُلفت کے دِل فریب مناظر سے پیار ہے
شیدا ہے جس پہ دل وہ دل کا قرار ہے
مناظرالدین مناظر
رو برو جب بھی تو ہوگیا
آئینہ سرخرو ہوگیا
رئوف رامش