Search

  پہلی بار جب وہ ایک دوسرے کی راہوں سے گذرے تو کچھ بھی نہیں ہوا ۔یہ جد و جہد بھرے دنوں کی بات ہے ۔ جب ہر روز نوجوانوں کی اور کبھی کبھی لڑکیوں کو بھی بھرتی دفتروں سے مایوس واپس لو ٹنا پڑتا تھا ، کیوں کہ نئے تشکیل شدہ ملک کی حفاظت کے لئے ہتھیار اٹھانے والے بہت سے لوگ آ رہے تھے ۔ دوسری بار وہ آنکار کے ایک چیک پوائنٹ پر ملے ۔ جنگ شروع ہو چکی تھی اور دور دراز کے شمالی علاقوں سے دھیرے دھیرے جنوب کی جانب بڑھ رہی تھی۔ وی اونتشا...

پورا پڑھیں

ممبرا(پریس ریلیز) پندرہ اگست کی شب نو بجے ممبرا میں یونیک ایجوکیشن سوسائٹی کے زیر اہتمام اور اردو لٹریری فورم کی جانب سے اسد اللہ خان انگلش ہائی اسکول و جونئیر کالج کے نعمان امام آڈیو ٹوریم میں معروف افسانہ نگار نیّر مسعود اور مشہور شاعر ظفر گورکھپوری کے لئے تعزیتی نشست کا اہتمام کیا گیا، جس کی صدارت سینئر صحافی عالِم نقوی نے کی۔ نشست کا افتتاح شعیب ندوی کے تلاوت کلام پاک سے ہوا۔ صدر تقریب اور تجربہ کار صحافی عالِم نقوی نے اپنے مضمون سچی کہانی سنانے والا نیّر مسعود میں کہا کہ نیر مسعود کہانی سننے...

پورا پڑھیں

ممبئی، 14 اگست: شعبہ اردو ،ممبئی یونیورسٹی اور سرسید اکیڈمی ممبئی کے باہمی اشتراک سے ایک شعری نشست کا انعقاد یوم آزادی ہند کی مناسبت سے کیا گیا۔ اس شعری نشست کی صدارت شعبہ اردو کے صدر پروفیسر صاحب علی نے کی اور ممبئی بی جے پی کے نائب صدر شری حید ر اعظم نے مہمان خصوصی کی حیثیت سے شرکت کی۔ پروگرام کے آغا ز میں پروفیسر صاحب علی نے کہا کہ شعبہ اردو ممبئی یونیورسٹی نے ہرسال یوم آزادی اور یوم جمہوریہ سے ایک دن قبل اس طرح کی شعری نشست کے انعقادکا فیصلہ کیا ہے اور اس...

پورا پڑھیں

اگر یہ کہاجائے کہ کرہٗ ارض ایک چھوٹی سی جگہ ہے اور یہ چھوٹی سی جگہ بھی اب مسلسل سمٹ رہی ہے تو حیرت نہیں ہونی چاہئے، کیونکہ گلوبل ولیج کی سوچ تو سٹیلائیٹ دور کے شروعات کی بات تھی۔ اب انسان 3Gاور4Gکے اس دور میں سائبر اسپیس کا سند باد بن چکا ہے۔ بہت پہلے بل گیٹس نے کہا تھا کہ : ”انٹر نیٹ ایک تلاطم خیز لہر ہے جو اس لہر میں تیرنا سیکھنے سے احتراز کریں گے ، اس میں ڈوب جائیں گے۔“ بل گیٹس کی بات خواہ غلط ہو یا صحیح، حقیقت یہ ہے کہ آج...

پورا پڑھیں

متاز شاعر اور نقاد وحید اختر 12 اگست 1934 کو اورنگ آباد میں پیدا ہوئے۔ اردو شاعری میں وہ منفرد شناخت کے حامل ہیں۔ جدیدیت کی تحریک کو نہ صرف اپنی شعری خدمات عطاکیں بلکہ اپنے مضامین کے ذریعے بھی انھوں نے جدیدیت کی تعبیر و تشریح کی کوشش کی۔ انھوں نے جدید طرز کے مرثیے لکھ کر اس صنف کا دائرہ وسیع کیا۔ وہ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں درس وتدریس سے منسلک رہے۔ 13 دسمبر 1996 کو دہلی میں انتقال ہوا۔

پورا پڑھیں

    تم گئے ساتھ اجالوں کا بھی جھوٹا ٹھہرا روز و شب اپنا مقدر ہی اندھیرا ٹھہرا   یاد کرتے نہیں اتنا تو دلِ خانہ خراب بھولا بھٹکا کوئی دو روز اگر آ ٹھہرا   کوئی الزام نسیمِ سحری پر نہ گیا  پھول ہنسنے پر سزاوار اکیلا ٹھہرا   پتیاں رہ گئیں ‘ بُو لے اُڑی آوارہ صبا قافلہ موجِ صبا کا بس اتنا ٹھہرا   روز نظروں سے گذرتے ہیں ہزاروں چہرے سامنے دل کے مگر ایک ہی چہرہ ٹھہرا   وقت بھی سعیِ مداوائے الم کر نہ سکا جب سے تم بچھڑے ہو خود وقت ہے ٹھہرا...

پورا پڑھیں

  ۔ممتاز شاعر اور نقاد وحید اختر 12 اگست 1934 کو اورنگ آباد میں پیدا ہوئے۔ اردو شاعری میں وہ منفرد شناخت کے حامل ہیں۔ جدیدیت کی تحریک کو نہ صرف اپنی شعری خدمات عطاکیں بلکہ اپنے مضامین کے ذریعے بھی انھوں نے جدیدیت کی تعبیر و تشریح کی کوشش کی۔ انھوں نے جدید طرز کے مرثیے لکھ کر اس صنف کا دائرہ وسیع کیا۔ وہ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں درس وتدریس سے منسلک رہے۔ مندرجہ ذیل کتابیں انھوں نے یادگار چھوڑی ہیں پتھروں کا مغنی ۔ (1966) شب کا رزمیہ ۔ (1973) زنجیر کا نغمہ ۔ (1982) کربلا تا...

پورا پڑھیں

    ڈھمپ اینڈ کو کا دفتر بڑے مزے میں چل رہا تھا مگر اس کی منیجری کم از کم خاور کے بس کا روگ نہیں تھی کیونکہ بزنس کے چکروں کے لئے اس کا ذہن موزوں نہیں تھا۔ ذہن موزوں رہا ہو یا نہ رہا ہو لیکن صورت تو ضرور ایسی تھی کہ وہ کسی فرم کا منیجر معلوم ہوسکتا تھا! بھاری بھرکم بارعب چہرے والا۔۔! چونکہ وہ بزنس کے معاملہ میں اناڑی تھا اس لئے اس کے کمرے میں لکڑی کی ایک دیوار سے پارٹیشنز کردیئے گئے تھے ایک طرف جولیانا بیٹھی ٹائپ رائٹر کھٹکا یا کرتی تھی...

پورا پڑھیں

  غزلیں مجھے خبر تھی مرا انتظار گھر میں رہا یہ حادثہ تھا کہ میں عمر بھر سفر میں رہا میں رقص کرتا رہا ساری عمر وحشت میں ہزار حلقۂ زنجیرِ بام و در میں رہا ترے فراق کی قیمت ہمارے پاس نہ تھی ترے وصال کا سودا ہمارے سر میں رہا یہ آگ ساتھ نہ ہوتی تو راکھ ہوجاتے عجیب رنگ ترے نام سے ہنر میں رہا اب ایک وادیِ نسیاں میں چھُپتا جاتا ہے وہ ایک سایہ کہ یادوں کی رہگزر میں رہا ———- ریت کی صورت جاں پیاسی تھی آنکھ ہماری نم نہ ہوئی تیری درد گساری...

پورا پڑھیں